23

نیو یارک کی تاریخی ’ریڈیو گلی‘ جسے ورلڈ ٹریڈ سینٹر کی تعمیر کے لیے ختم کر دیا گیا


اینجل برمودِز
ڈیلی اردو نیوز نیٹ ورک
امریکی شہر نیو یارک میں اس جگہ کو ’سب سے قدیم، سب سے اہم اور خریداروں کے لیے سب سے پُرونق شاپنگ سینٹرز کے طور پر متعارف کرایا جاتا تھا۔ لیکن اس جگہ کی تاریخی حیثیت اور مقام بھی اسے تباہی سے نہیں بچا سکا اور یوں یہاں ورلڈ ٹریڈ سنٹر اور اس کے مشہور ٹوئن ٹاورز تعمیر کر دیے گئے۔

ورلڈ ٹریڈ سینٹر کے باضابطہ افتتاح کو گذشتہ چار اپریل کو 50 سال مکمل ہوئے۔

اس جگہ کو ’ریڈیو گلی‘ کہا جاتا تھا اور اسے نیویارک کا پہلا ’ٹیکنالوجی سے آراستہ علاقہ‘ سمجھا جاتا تھا، جس کی وجہ یہاں ریڈیو، ٹیلی ویژن، گھریلو برقی آلات اور ان کے پرزوں کی فروخت کے لیے بڑی تعداد میں موجود کمپنیاں اور دکانیں تھیں۔

20 اپریل 1962 کو ’دی نیویارک ٹائمز‘ میں صحافی مارٹن آرنلڈ نے لکھا کہ ریڈیو گلی ’زیادہ تر آواز کے معیار اور ریڈیو کے شوقین افراد کے لیے ’ایسٹ کوسٹ‘ مرکز کے طور پر جانا جاتا تھا۔‘

اخبار کے مطابق ’اس خطے میں پھولوں اور پودوں کی بہت سی دکانیں، ہارڈویئر کی دکانیں، کتابوں کی دکانیں، ریستوران اور سینکڑوں دیگر کاروبار ہیں۔‘

ریڈیو گلی نے اس وقت لوئر مین ہٹن میں تقریباً 13 بلاکس پر مشتمل تھی۔ اس کی حدود شمال میں بارکلے کی سڑکیں تھیں۔ مشرق میں چرچ، جنوب میں لبرٹی اور مغرب میں دریائے ہڈسن تھا۔ اس کی خاص پہچان کورٹ لینڈ سٹریٹ تھی۔

اپنی بقا کو یقینی بنانے کے لیے اس مقام نے بہت کچھ کیا مگر پھر اس کے خاتمے سے یہ سب رونقیں مانند پڑ گئیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں