14

ملک بھر میں پولیو مہم کا آج سے آغاز


(ڈیلی اردو نیوز نیٹ ورک)
پنجاب: 2 کروڑ 12 لاکھ بچے پولیو کے قطرے پیئیں گے
نگراں وزیرصحت ڈاکٹر جمال ناصر نے پولیو مہم سے متعلق کہا ہے کہ پنجاب بھر میں انسداد پولیو مہم جاری ہے، صوبے میں 2 کروڑ 12 لاکھ بچوں کو قطرے پلائے جائیں گے۔

انہوں نے کہا ہے کہ صحت مند زندگی ہر بچے کا بنیادی حق ہے، اس وقت پاکستان اور افغانستان کو ہی پولیو کے خطرے کا سامنا ہے۔

وزیرِ صحت پنجاب ڈاکٹر جمال ناصر کا یہ بھی کہنا ہے کہ رواں پولیو مہم میں 2 لاکھ 4 ہزار پولیو ورکرز حصہ لے رہے ہیں۔

پنجاب کے مختلف شہروں میں پولیو مہم ملتان

ملتان میں 5 روزہ انسدادِ پولیو مہم کے دوران 6 اکتوبر تک 10لاکھ سے زائد بچوں کو پولیو وائرس سے بچاؤ کے قطرے پلائے جائیں گے۔

بہاولپور
ڈپٹی کمشنر بہاولپور کے مطابق بہاولپور میں 2 تا 4 اکتوبر 8 لاکھ بچوں کو انسدادِ پولیو کے قطرے پلائے جائیں گے۔

سرگودھا
محکمۂ صحت کے مطابق سرگودھا میں انسدادِ پولیو مہم 7 اکتوبر تک جاری رہے گی، اس دوران 6 لاکھ 63 ہزار 793 بچوں کو قطرے پلائےجائیں گے۔

گجرات
پنجاب کے شہر گجرات میں 3 روزہ پولیو مہم کے دوران سے 4 اکتوبر تک 4 لاکھ 96 ہزار 555 بچوں کو پولیو کے قطرے پلائے جائیں گے۔

ظفروال
انسدادِ پولیو مہم کے دوران ظفروال میں 3 لاکھ 65 ہزار 198 بچوں کو پولیو ویکسین کے قطرے پلائے جائیں گے۔

بھکر
بھکر میں انسدادِ پولیو مہم کے دوران 3 لاکھ 54 ہزار بچوں کو قطرے پلائے جائیں گے۔

حافظ آباد
حافظ آباد میں 5 روزہ انسدادِ پولیو مہم کے دوران 2 لاکھ 34ہزار سے زائد بچوں کو قطرے پلائےجائیں گے۔

چونیاں
چونیاں میں پولیو ٹیمیں گھروں، اسکولوں، بس اڈوں اور دیگر فکس سینٹرز پر بچوں کو پولیو کے قطرے پلائیں گی۔

پاکپتن
پاکپتن میں 5 روزہ انسدادِ پولیو مہم میں 6 اکتوبر تک 3199 ٹیمیں حصہ لیں گی، اس دوران 382128 بچوں کو پولیو ویکسین کے قطرے پلائے جائیں گے۔

بلوچستان میں انسدادِ پولیو مہم
ایمرجینسی آپریشن سینٹر کے مطابق بلوچستان بھر میں 7 روزہ انسدادِ پولیو مہم کا آج سے آغاز ہو گیا، اس دوران 24 لاکھ 44 ہزار سے زائد بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے جانے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے۔

مہم میں 10 ہزار سے زائد ٹیمیں حصہ لے رہی ہیں، مہم کے دوران بچوں کو وٹامن اے کے قطرے بھی پلائے جائیں گے۔

سندھ میں پولیو کے خلاف مہم
ترجمان محکمۂ صحت سندھ کے مطابق صوبے بھر میں انسدادِ پولیو مہم آج سے 8 اکتوبر تک جبکہ 30 اضلاع میں 6 اکتوبر تک جاری رہے گی۔

اس دوران 37 ہزار سے زائد رضاکار بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائیں گے۔

ترجمان محکمۂ صحت سندھ کا یہ بھی کہنا ہے کہ سندھ میں جولائی 2020ء سے پولیو کا کوئی کیس رپورٹ نہیں ہوا۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں