62

او آئی سی نے سویڈن کی خصوصی ایلچی کی حیثیت معطل کر دی

اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) نے سویڈن کی خصوصی ایلچی کی حیثیت معطل کر دی۔

او آئی سی کے سیکرٹری جنرل حسین براہیم طحٰہ نے ڈنمارک کے دارالحکومت کوپن ہیگن میں عراقی سفارت خانے کے سامنے قرآن پاک کے نسخے کو نذر آتش کرنے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔

او آئی سی اجلاس میں سویڈن کی خصوصی ایلچی کو معطل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ۔او آئی سی سیکرٹری جنرل نے اس فیصلے سے سویڈن کے وزیر خارجہ کو لکھے گئے ایک خط میں آگاہ کیا۔
او آئی سی کے سیکرٹری جنرل حسین براہیم طحٰہ نے ‘اسلامی مقدسات کی خلاف ورزی’ کے بار بار ہونے والے واقعات پر اپنے گہرے عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کی کارروائیاں مذہبی منافرت، عدم برداشت اور تفریق کو ہوا دیتی ہیں جس کے خطرناک نتائج برآمد ہوں گے۔

سیکرٹری جنرل او آئی سی نے ڈنمارک کی حکومت پر زور دیا کہ وہ ایسی اشتعال انگیز کارروائیوں کو روکنے کے لیے ضروری اقدامات اٹھائے۔
او آئی سی ایگزیکٹو کمیٹی کے غیر معمولی اجلاس کی طرف سے جاری کردہ حتمی اعلامیے میں کہا گیا کہ اس طرح کی اشتعال انگیزیاں شہری اور سیاسی حقوق کے بین الاقوامی معاہدے کے آرٹیکل (19) اور (20) کی روح کے خلاف ہیں۔

اجلاس میں شامل تمام ممالک نے مطالبہ کیا کہ کسی ایسے ملک سے تعلق کے سرکاری فریم ورک کا جائزہ لیتے ہوئے ممکنہ اقدامات کیے جائیں جس میں متعلقہ حکام کی رضامندی سے قرآن کریم یا دیگر اسلامی اقدار اور علامات کی بے حرمتی کی گئی ہو، ان میں خصوصی ایلچی کا درجہ معطل کرنا بھی شامل ہے۔
واضح رہے کہ گزشتہ روز ڈنمارک میں قرآن پاک کی بے حرمتی کا ایک اور افسوسناک واقعہ رونما ہوا جس میں دو افرد نے عراقی سفارت خانے کے سامنے قرآن پاک کی بےحرمتی کی۔

اس سے پہلے سویڈن میں بھی حالیہ کچھ روز کے دوران قرآن پاک کی بے حرمتی کے دو واقعات رونما ہو چکے ہیں جبکہ ایران اور عراق میں ہزاروں افراد نے سویڈن اور ڈنمارک کے خلاف مظاہرے بھی کیے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں